ایگریکلچر سیکٹر کو فروغ دینے اور مستحکم کرنے کیلئے فعال پالیسی وضع کرنے کی غرض سے مشترکہ کاوشوں کی ضرورت ہے۔,وزیراعظم شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد۔ 4 اکتوبر(ڈی این ڈی) حکومت کے خبر رساں ادارے اے پی پی کی خبر کے مطابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ حکومت اور نجی سیکٹر کو موجودہ چیلنجز پر قابو پانے اور زراعت کے شعبہ کو فروغ دینے کی غرض سے فعال پالیسی وضع کرنے کیلئے مشترکہ تعاون کی ضرورت ہے۔ یہ بات انہوں نے ایگریکلچر سیکٹر کے مختلف سیکٹرز سے تعلق رکھنے والے نمائندوں پر مشتمل وفد سے بات چیت کرتے ہوئے کہی جنہوں نے بدھ کو ان سے ملاقات کی۔ وزیر برائے قومی تحفظ خوراک و ریسرچ سکندر حیات بوسن، خلیل ستار، امداد نظامانی، خالد کھوکھر، سیّد ندیم شاہ، صاحبزادہ قدرت , مسیر محمد میدہ خیل، ملک اے رحمن لانگ، میاں عمیر مسعود، چوہدری رضوان اقبال، میاں غلام مصطفی وٹو اور دیگر نے اجلاس میں شرکت کی۔ اجلاس میں پیداواری اخراجات، پیداوار، مقامی زراعتی مصنوعات کی مسابقت و مارکیٹنگ اور ایگریکلچر کو درپیش چیلنجوں سمیت ایگریکلچر سیکٹر سے متعلق امور زیر بحث لائے گئے۔ زراعتی سیکٹر کی برآمدی صلاحیت اور سی پیک کے ذریعے نئے مواقع بھی زیر بحث لائے گئے۔ وزیراعظم نے ملک میں روزگار کے مواقع پیدا کرنے، اقتصادی ترقی اور فوڈ سیکورٹی کو یقینی بنانے میں ایگریکلچر سیکٹر کے کردار کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ ایگریکلچر سیکٹر حکومت کی اہم ترجیحات میں شامل ہے اور حکومت کسانوں بالخصوص چھوٹے کسانوں کو ہر ممکنہ سہولتوں کی فراہمی کیلئے کوشاں ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ ملک میں فوڈ سیکورٹی کو یقینی بنانے اور کسانوں کو درپیش مسائل پر قابو پانے کیلئے ماہرین زراعت کی جانب سے جامع منصوبہ تیار کرنے کی ضرورت ہے۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ حکومت اور نجی سیکٹر کو موجودہ چیلنجوں پر قابو پانے، ایگریکلچر سیکٹر کو فروغ دینے اور مستحکم کرنے کیلئے فعال پالیسی وضع کرنے کی غرض سے مشترکہ کاوشوں کی ضرورت ہے۔ وزیراعظم نے کسانوں کی جانب سے اٹھائے گئے مختلف مسائل کا نوٹس لیتے ہوئے فنانس ڈویڑن، وزارت تجارت، ایف بی آر اور ماہرین زراعت کے نمائندوں پر مشتمل کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی جو کسانوں کو درپیش تمام مسائل کا جائزہ لے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *