از بکستان ایئر ویز 20جولائی سے لاہور کے لئے دوبارہ پروازوں کا آغاز کرے گی

از بکستان ایئر ویز 20جولائی سے لاہور کے لئے دوبارہ پروازوں کا آغاز کرے گی
از بکستان ایئر ویز 20جولائی سے لاہور کے لئے دوبارہ پروازوں کا آغاز کرے گی
تاشقند،ازبکستان(ڈی این ڈی): وسطی ایشیائی ریاست ازبکستان کی سرکاری ائیر لائن ’’ازبکستان ایئر ویز‘‘رواں سال 20جولائی سے تاشقند سے لاہور پروازوں کا دوبارہ آغاز کرے گی۔
ڈسپیچ نیوز ڈیسک (ڈی این ڈی) نیوز ایجنسی کے مطابق یہ ازبکستان کے اسلام آباد میں سفیرفرقت صدیقوو کی ذاتی کوششوں کا ثمر ہے کیونکہ وہ چاہتے ہیں کہ دونوں ممالک کے مابین مختلف شعبوں میں مزید قربت پیدا ہو ۔
تاشقند اور لاہور کے درمیان براہ راست پروازوں کے دوبارہ آغاز کا فیصلہ ہالیڈے پلانرز اور ازبکستان ایئر ویز کے اعلیٰ حکام کے درمیان تاشقند میں ایک ملاقات کے دوران کیا گیا۔یہ فیصلہ کیا گیا کہ 20جولائی سے ایک ہفتہ میں لاہور تا تاشقند دو پروازیں چلائی جائیں گی اور مستقبل میں ان کی تعداد میں اضافہ بھی کیا جا سکتا ہے۔
ماہرین کے خیال میں لاہور اور تاشقند کے درمیان پروازوں کی بحالی سے دونوں ممالک معیشت ، توانائی اور سیاحت کے شعبوں میں ایک دوسرے کی مہارت سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھاسکیں گے۔

یورپ میں اردو زبان کی ترویج و ترقی کیلئے ادبی تنظیم ’’ ارباب ذوق ‘‘ کا قیام عمل

یورپ میں اردو زبان کی ترویج و ترقی کیلئے ادبی تنظیم ’’ ارباب ذوق ‘‘ کا قیام عمل

یورپ میں اردو زبان کی ترویج و ترقی کیلئے ادبی تنظیم ’’ ارباب ذوق ‘‘ کا قیام عمل
لندن(ڈی این ڈی) یورپ میں اردو زبان کی ترویج و ترقی اور نئی نسل کو اردو کی جانب راغب کرنے کیلئے برطانیہ میں ایک نئی ادبی تنظیم’’اربابِ زوق‘‘ کا قیام عمل میں لایا گیا ہے ۔ نئی ادبی تنظیم ارباب ذوق کی جانب سے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق معروف ادبی و سماجی شخصیت ڈاکٹر عدیم مرتضی راجہ چیئرمین جبکہ معروف شاعر، ادیب، صحافی اور مرثیہ نگار صفدر ھمدانی صدر ہونگے۔
پریس ریلیزکے مطابق یورپی سطح پر نئی ادبی تنظیم بنانے کی ضرورت کے اغراض مقاصد بیان کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یورپ بھر میں یوں تو ادبی تنظیموں کی کوئی کمی نہیں ہے لیکن ان میں سے غالب اکثریت کی کارکردگی فقط مشاعروں اور ادبی کتب کی تقاریب اجرا تک محدود ہے جس سے اردو ادب فقط شعرو شاعری تک سمٹ کے رہ گیا ہے۔
اربابِ ذوق کے چیئرمین ڈاکٹر عدیم مرتضی راجہ اور صدر صفدر ھمدانی نے ایک مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ یورپ کی سطح پر قائم ہونے والی یہ نئی ادبی تنظیم شعرو ادب کے ساتھ ساتھ اردو زبان کی ترویج و ترقی پر بھی زور دے گی اور خاص طور پر نئی نسل کو اردو زبان کی طرف راغب کرنے کے مختلف منصوبوں کو متعارف کروایا جائے گا اور معیاری ادب تخلیق کرنے کے ضمن میں ورکشاپس کا اہتمام بھی کیا جائے گا۔تنظیم کے ہونے والے اجلاس میں دیگر عہدیداروں کا چناؤ بھی عمل میں لایا گیا ۔دیگر عہدیداروں میں محترمہ ناہید مہدی( وائس چیرپرسن)،فرخندہ رضوی( سیکرٹری جنرل)سہیل لون( سیکرٹری نشرواشاعت) اور رضا سید کو سیکرٹری ملٹی میڈیا و پبلکیشن مقرر کیا گیا۔

پاکستان کا قطر کے ساتھ ایل جی این کی در آمد کا معاہدہ اعتراضات کی زد میں

پاکستان کا قطر کے ساتھ ایل جی این کی در آمد کا معاہدہ اعتراضات کی زد میں

پاکستان کا قطر کے ساتھ ایل جی این کی در آمد کا معاہدہ اعتراضات کی زد میں
اسلام آباد(ڈی این ڈی): موجودہ حکومت کی جانب سے قطر کے ساتھ مائع قدرتی گیس( ایل این جی) کی در آمد سے متعلق حالیہ طے پا جانے والے معاہدے نے کئی سوالات کو جنم دیا ہے او راس بار ے میں قومی احتساب بیورو (نیب) نے اپنی تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔
ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں کے مطابق اگرچہ نیب نے پاکستان قطر ایل این جی معاہدے سے متعلق تمام معلومات اکھٹی کرنا شروع کر دی ہیں تاہم دلچسپی کی بات یہ ہے کہ ملک کی تمام اہم سیاسی جماعتیں بشمول پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی)، جماعت اسلامی (جے آئی) اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) اس معاہدے کے بارے میں کوئی بھی بیان دینے سے گریزاں ہیں کیونکہ قطر کی حکومت کے پاکستانی سیاسی قیادت کے ساتھ بہت خوشگوار تعلقات ہیں۔
ذرائع ابلاغ کا دعوی ہے کہ اس مذکورہ سودے میں کک بیکس اور شفافیت کے حوالے سے بہت سے سوالات اٹھائے جا رہے ہیں۔
واضح رہے کہ پاکستان اور قطر کے درمیان 10فروری 2016ء کو دوحہ میں پاکستان کو سالانہ ایک ارب ڈالر (تقریباًایک کھرب روپے )مالیت کی ایل این جی کی فراہمی کا معاہدہ طے پا یا تھا جس پر وزیراعظم محمد نواز شریف اور قطر کے امیر تمیم بن حمد الثانی کی موجودگی میں وزیر پٹرولیم و قدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی اور قطر گیس بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین سعد شیریدا القابی نے دستخط کئے تھے۔معاہدے کے تحت قطر مائع گیس کمپنی 2016ء سے 2031ء کے عرصہ کے لئے پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او)کو ایل این جی فروخت کرے گی۔
نیب میں موجود ذرائع کا کہنا ہے کہ بیورو اس معاہدے سے متعلق زیادہ سے زیادہ معلومات جمع کر رہا ہے کیونکہ اس میں ایک آپریٹو شق شامل ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کو مسلسل 10سال تک قطر سے ایل این جی خریدنا ہو گی۔
دوسری جانبذرائع کا دعوی ہے کہ سیکرٹری پٹرولیم نے پہلے ہی ایل این جی معاہدے سے متعلق نیب کو اپنا بیان ریکارڈ کروا دیا ہے۔ تاہم نہ ہی وزارت پٹرولیم اور نہ ہی نیب نے باضابطہ طور پر تسلیم کیا ہے کہ ایسا کوئی بیان ریکارڈ کیا گیا ہے۔

پاکستان اور ازبکستان کے مابین سماجی اور ادبی تعلقات بڑھانے کی اشد ضرور ت ہے، مقررین

پاکستان اور ازبکستان کے مابین سماجی اور ادبی تعلقات بڑھانے کی اشد ضرور ت ہے، مقررین

پاکستان اور ازبکستان کے مابین سماجی اور ادبی تعلقات بڑھانے کی اشد ضرور ت ہے، مقررین
اسلام آباد(ڈی این ڈی):اسلام آباد میں قائم ازبکستان کے سفارت خانے میں وسطی ایشیائی ملک کے قومی شاعر علی شیر نوائے اور ہیرو ظہیر الدین بابر کی سالگر ہ کے موقع پر ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا۔
تقریب میں پاکستان میں ازبکستان کے سفیر فرقت صدیقوو سمیت ڈاکٹر پروفیسر آفتاب قاضی ، پاک ازبک فورم کے صدر آغا اقرار ہارون اورزندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔
اس دوران علی شیر نوائے اور ظہیر الدین بابر کی زندگیوں پر مقالے پڑھے گئے اور مقررین نے پاکستان اور ازبکستان کو سیاسی اور معاشی تعلقات کے ساتھ ساتھ سماجی اور ادبی شعبوں میں بھی ایک دوسرے کے مزید قریب آنے کی ضرورت پر زور دیا۔
مقررین کا کہنا تھا کہ پاکستان اور ازبکستان کے درمیان تاریخی ، سیاسی اور معاشی لحاظ سے بہت مضبوط تعلقات ہیں نیز انہیں مزید مستحکم بناکر دونوں ملکوں کی عوام کے لئے فائدہ مند بنانا چاہئے۔ا ن کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں ازبکستان کے سفیر پاکستانی معاشرے پر گہری نگاہ رکھتے ہیں اور وہ دونوں ملکوں کو ایک دوسرے کے مزید قریب لانے کے لئے اپنا بھر پور کردار ادا کر رہے ہیں۔
آغا اقرار ہارون نے اپنے خطاب میں شاعری اور ادب کے لئے علی شیر نوائے کی خدمات کو سراہا اور کہا ہے کہ پاکستان کی قومی زبان اردو ازبکستان کی پرانی زبان چغتائی سے ہی نکلی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں موجودہ بہت سی تاریخی عمارتوں کے نام اور اردو زبان پر ازبک ثقافت کا اثر اور رنگ بہت نمایاں ہے۔

پاکستان میں مقیم افغان مہاجرین کے ہاں ہر سال 60 ہزار بچے پیدا ہوتے ہیں،یو این ایچ سی آر

بچیوں کی تعلیم کے حوالے سے افغانستان کی صورتحال انتہائی تشویشناک قرار

پاکستان میں مقیم افغان مہاجرین کے ہاں ہر سال 60 ہزار بچے پیدا ہوتے ہیں،یو این ایچ سی آر
اسلام آباد(ڈی این ڈی): اقوام متحدہ کے ادارے برائے پناہ گزین( یو این ایچ سی آر ) نے کہا ہے کہ پاکستان میں قیام پذیر افغان مہاجرین کے ہاں ہر سال تقریبا 60 ہزار بچے پیدا ہوتے ہیں۔
یو این ایچ سی آر کی ایک رپورٹ کے مطابق افغان مہاجرین میں پیدائشی سرٹیفکیٹ کی ضرورت واہمیت کے بارے میں آگاہی کی کمی اور دور دراز رجسٹریشن مراکز کی وجہ سے 2010سے لے کر اب تک پیدا ہونے والے تقریباً ایک لاکھ بچوں کی پیدائش کی رجسٹریشن بھی نہیں کروائی گئی ہے۔پناہ گزینوں کے لئے اقوام متحدہ کا یہ ادارہ 2002 سے لے کر اب تک پاکستان میں مقیم تقریباً 38 لاکھ افغان مہاجرین کی وطن واپسی میں ان کی معاونت کر چکاہے۔
یاد رہے کہ یو این ایچ سی آر کے مطابق پاکستان میں تقریباً 1.6 ملین رجسٹرڈ افغان شہری موجود ہیں۔

اسلام آباد ضلعی انتظامیہ میں 356آسامیاں خالی

اسلام آباد ضلعی انتظامیہ میں 356آسامیاں خالی

اسلام آباد ضلعی انتظامیہ میں 356آسامیاں خالی
اسلام آباد(ڈی این ڈی):وفاقی دارلحکومت کی ضلعی انتظامیہ میں اس وقت مختلف کیڈرز کی 365آسامیاں خالی پڑی ہیں جن پر بھرتیوں کی منظوری کے لئے اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن سے رابطہ کیا گیا ہے۔
ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے ایک عہدیدار نے بتا یا کہ اس وقت اسلام آباد کی ضلعی انتظامیہ کے مختلف دفاتر اور محکموں میں گریڈ 1سے 19میں مختلف کیڈرز کی 356آسامیاں خالی پڑی ہیں جبکہ اسلام آباد پولیس میں بھی 400سے زائد نشستیں خالی ہیں۔انہوں نے کہا کہ خالی آسامیوں کو پر کرنے کے لئے حکومت کی پالیسی کے مطابق تمام قانونی لوازمات بشمول اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن سے عدم اعتراض سرٹیفکیٹ (این او سی ) کے حصول کو پورا کیا جا رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ جیسے ہی تمام قانونی لوازمات پورے ہوں گے ، ان کے مطابق خالی آسامیوں پر بھرتیاں کی جائیں گی۔
انہوں نے بتایا کہ گزشتہ پانچ سالوں میں اسلام آباد پولیس سمیت وفاقی دارلحکومت کی ضلعی انتظامیہ میں مختلف دفاتر اور محکموں میں 996افراد کوتعینات کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ 963افراد کو اسلام آبادپولیس میں بھرتی کیا گیا جبکہ صرف 33افراد کی بھرتیاں اسلام آباد ضلعی انتظامیہ میں مختلف کیڈرز کے لئے عمل میں لائی گئیں۔
عہدیدار نے مزید بتایا کہ 30فیصد سے زائد آسامیاں اسلام آباد کے بنیادی صحت کے مراکز اور دیہی صحت کے مراکز میں خالی پڑی ہیں ۔انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ اگر وفاقی دارلحکومت میں صحت کی دیکھ بھال کے بنیادی ڈھانچے کی یہ صورت حال ہے تو دیگر علاقوں میں بہتری کی کیا توقع کی جاسکتی ہے۔
بالخصوص صحت کے محکمے میں بھرتیوں کے لئے اسلام آباد ضلعی انتظامیہ کے اعلیٰ حکام کی طرف سے کی جانے والی کوششوں کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ انتظامیہ نے صحت کی دیکھ بھا ل کے مراکز میں طبی عملے کی تقرری کا منصوبہ بنایا تھا لیکن لوگ دیہی علاقوں میں خدمات سر انجام دینے کے لئے تیار نہیں ہیں جب تک کہ انہیں اضافی مراعات کی پیشکش نہ کی جائے۔
اسلام آباد ضلعی انتظامیہ کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے رابطہ کرنے پر اس بات کی تصدیق کی کہ اس وقت 300سے زائد آسامیاں خالی پڑی ہیں جنہیں وزارت خزانہ اور اسٹیبلشمنٹ ڈویڑن سے کلیئرنس ملنے کے بعد پر کر دیا جائے گا۔

نئے ایم ڈی پی ٹی وی کے لئے میدان سج گیا

نئے ایم ڈی پی ٹی وی کے لئے میدان سج گیا

نئے ایم ڈی پی ٹی وی کے لئے میدان سج گیا
اسلام آباد(ڈی این ڈی): مختلف نوعیت کے تنازعات میں گھرے لیکن پر اعتماد حریفوں کے مابین پاکستان ٹیلی ویژن کارپوریشن (پی ٹی وی) کی جلد خالی ہونے والی منیجنگ ڈائریکٹر کی آسامی پر براجمان ہونے کے لئے پنجہ آزمائی کا میدان سج گیا ہے تاہم موجودہ ایم ڈی پی ٹی وی کے قریبی ذرائع کا دعویٰ ہے کہ محمد مالک اپنی مدت ملازمت میں توسیع حاصل کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔
واضح رہے کہ موجودہ منیجنگ ڈائریکٹر پی ٹی وی محمد مالک کی مد ت ملازمت 29فروری کو ختم ہو رہی ہے جس کے بعد اس انتہائی اہم عہدے پر نئی تقرری کی جائے گی ۔تاہم وفاقی حکومت محمد مالک کو ہی مزیدعرصے کے لئے اس عہدے پر فائز رکھ سکتی ہے۔لیکن ذرائع کے مطابق پی ٹی وی کے سابق ایم ڈی یوسف بیگ مرزا پھر سے اس پوزیشن کو حاصل کرنے کے لئے بہت تگ و دو کر رہے ہیں اور اس میں ان کی کامیابی عین ممکن ہے۔
یوسف بیگ مرز اس سے پہلے بھی کئی مواقع پر ایم ڈی پی ٹی وی رہ چکے ہیں اور موجودہ وزیر اعظم نواز شریف کے منظور نظر رہے ہیں۔ نواز شریف نے اپنے دوسرے دور اقتدار (1997-99)میں یوسف بیگ مرزا کو برطانیہ کے بلوا کر پہلی بار بطور ایم ڈی پی ٹی وی تعینات کیاتھا۔تاہم نواز شریف کے اقتدار کے خاتمے کے بعد یو سف بیگ مرزا فوجی حکمران جنرل پرویز مشرف کے دور میں بھی کامیابی کے ساتھ اس عہدے پر فائز رہے۔بعد ازاں پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) بھی کافی عرصے تک یوسف بیگ مرزا پر بہت مہربان رہی۔
یوسف مرزا بیگ کی طاقت کے لئے بلاتفریق تمام حکمرانوں کے لئے خدمات ان کی اقتدار کے ایوانوں تک پہنچنے کے لئے صلاحیتوں کا ثبوت تو ہے ہی لیکن اس سے ان کی ساکھ اور جمہوریت کے ساتھ وابستگی پر سوالیہ نشان بھی اٹھتا ہے۔
علاوہ ازیں سال 2014 کے لیے آڈیٹر جنرل آف پاکستان کی رپورٹ جس میں پاکستان ٹیلی ویژن کارپوریشن میں مبینہ طور پر مالی بدانتظامی، بدعنوانی اور اقربا پروری کی وجہ سے 773 ملین کے نقصان کا انکشاف کیا گیا ہے بھی یوسف بیگ مرزا کی بطور ایم ڈی پی ٹی وی تقرری میں نئی رکاوٹوں کو جنم دے سکتی ہے۔تاہم ذرائع کے کہنا ہے کہ باوجود ان مذکورہ خامیوں یا مشکلات کے ، یوسف بیگ مرزا ہی نئے ایم ڈی پی ٹی وی کے لئے پاکستان مسلم لیگ نواز کی سب سے پہلی چوائس ہیں۔
ایم ڈی پی ٹی وی کے عہدے کے دیگر امیدواروں میں ڈائر یکٹر جنرل آئی اینڈ پی وزارت اطلاعات ناصر جمال بھی شامل ہیں جو اچھی شہرت کے حامل اور کرپشن سے پاک ماضی رکھتے ہیں۔
دوسری جانب اگرچہ ذرائع کا دعویٰ ہے کہ وزارت اطلاعات و نشریات نے ابھی تک محمد مالک کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق کوئی سمری نہیں بھیجی ہے اور ان کی تعلیمی قابلیت بھی محض گریجویشن ہے۔لیکن محمد مالک کے قریبی ساتھی پر امید ہیں کہ سمری جلد ارسال کر دی جائے گی کیونکہ پاکستان ٹیلی ویژن کے چیئر مین عطاء الحق قاسمی اور وفاقی وزیر برائے اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید کے موجودہ ایم ڈی پی ٹی وی کے ساتھ اچھے مراسم ہیں ۔

جدید ریڈیو کیب ٹیکسی سروس ۔۔۔اہل لاہور کے لئے تحفہ

جدید ریڈیو کیب ٹیکسی سروس ۔۔۔اہل لاہور کے لئے تحفہ

جدید ریڈیو کیب ٹیکسی سروس ۔۔۔اہل لاہور کے لئے تحفہ
تحریر:انوارفرید
ٹرانسپورٹ سسٹم معاشرہ کی تہذیب و ثقافت کا عکاس ہوتاہے بلاشبہ بہترین اور جدید ٹرانسپورٹ سسٹم مہذب معاشروں کی پہچان ہوتا ہے یہی وجہ ہے کہ پنجاب حکومت وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کی قیادت میں ٹرانسپورٹ کے نظام کو جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے اورذرائع نقل وحمل کو بہتر بنانے پر بھر پور توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے۔سال 2008 میں پنجاب کی حکومت سنبھالتے ہی انہوں نے ٹرانسپورٹ کے شعبہ کی بہتری اور ٹرانسپورٹ کلچر کی تبدیلی کو اپنی ترجیح بنایا۔شہبازشریف نے عوام کو سستی،آرام دہ اور محفوظ سفری سہولیات کی فراہمی پر اربوں روپے صرف کر رہی ہے۔ صوبے بھر میں انفراسٹرکچر کو بہتربنایا،سڑکوں، پلوں اور انڈرپاسز کاجال بچھادیا کیونکہ وہ اس بات کو اچھی طرح سمجھتے ہیں کہ تیزرفتار ترقی اورمعاشی سرگرمیوں کے فروغ میں برق رفتار ذرائع نقل و حمل بنیادی کردار ادا کرتے ہیں۔ وزیر اعلی پنجاب محمد شہباز شریف اور میئر استنبول ڈاکٹر قادر توپباش نے جدید ریڈیو کیب ٹیکسی سروس کا افتتاح کر دیاہے ۔ ابتدائی طور پر لاہور میں 100گاڑیاں چلائی جائیں گی جس کی تعداد میں مرحلہ وار اضافہ کیا جائے گا ۔ وزیر اعلی شہباز شریف نے افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ترکی کی دوستی صدیوں پر محیط ہے اور دنیا جانتی ہے کہ پاکستان اور ترکی کے عوام یکجان دو قالب ہیں بلا شبہ دونوں ملکوں کے عوام کے دل ایک ساتھ دھڑکتے ہیں ۔البراک گروپ نے ہمارے گزشتہ دورحکومت میں پنجاب میں سرمایہ کار ی کا آغازکیا اور آج اس گروپ کی سرمایہ کاری اربوں روپے تک پہنچ چکی ہے ۔ ترک قیادت رجب طیب اردگان اور وزیر اعظم محمد نواز شریف کے دور میں پاک ترک دوستی کو نئی جہت ملی ہے اور یہ دوستی سود مند معاشی تعلقات میں بدل چکی ہے اور دونوں ملکوں کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری میں اضافہ ہورہا ہے ۔سرمایہ کاری کے فروغ کے لئے ترکی اور پنجاب کی حکومتوں نے بھی باہمی معاونت کے تحت کام کیا اور اس اشتراک کار کو آگے بڑھایا۔ ترکی اور پنجاب حکومت کے مابین بڑھتے ہوئے اشتراک کار میں میرے بھائی قادر توپباش کا کردار انتہائی نمایاں رہا ہے جنہوں نے ہر موقع پر ہمیں سپورٹ کیا ہے ۔ وزیر اعلی نے جدید ٹیکسی سروس کے آغاز پر قادرتوپباش اور البراک گروپ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ لاہور کے شہریوں کے لئے جدید ریڈیو کیب ٹیکسی سروس کا آغاز ایک تحفہ ہے اورایک سوگاڑیوں سے شروع کی جانے والی اس سروس میں آئندہ چند برس میں جدید ریڈیو کیب گاڑیوں کی تعداد ہزاروں تک پہنچ جائے گی جس سے شہریوں کو معیاری سفری سہولتیں میسر آئیں گی۔ انہوں نے کہا کہ میئر استببول ڈاکٹر قادر توپباش میرے بھائی اور دوست ہیں اورقادر توپباش کے دورے سے پاکستانی عوام خصوصا پنجاب کے عوام کو بہت خوشی ہوئی ہے ۔ میئراستنبول ڈاکٹر قادر توپباش نے بھی اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں پنجاب کے بھائیوں کے لئے ترک بھائیوں کی محبت اور خلوص کا پیغام لیکر آیا ہوں ۔ پنجاب حکومت کے ساتھ مستقبل میں بھی تعاون کا فروغ جاری رکھیں گے۔ٹیکسی سروس کے افتتاح کے بعد وزیر اعلی محمد شہباز شریف اور میئراستبول ڈاکٹر قادر توپباش نے جدید ریڈیوکیب گاڑی میں بیٹھے اور گاڑی کو چلایا۔ترکی کے سفیر بابر ایس گرگن ، ایم این اے مہر اشتیاق احمد، خواجہ احمد حسان، البراک گروپ نوری البراک کے علاوہ شہریوں کی بڑی تعداد بھی اس موقع پر موجود تھی۔پاکستان مسلم لیگ(ن) کی قیادت نے عوام سے جو وعدے کئے ہیں ان کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے سر گرداں ہے