بنگلہ دیش میں داعش کی پہلی کاروائی، اطالوی شہری ہلاک

بنگلہ دیش میں داعش کی پہلی کاروائی، اطالوی شہری ہلاک

بنگلہ دیش میں داعش کی پہلی کاروائی، اطالوی شہری ہلاک

ڈھاکہ، بنگلہ دیش (ڈی این ڈی): بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں نامعلوم افرادنے ایک اطالوی شہری کو گولی مار کر ہلاک کر دیا ، بعد ازاں شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ عراق و شام (داعش) نے حملے کی ذمہ داری قبول کر لی۔ ڈھاکہ میں پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ایک موٹر سائیکل پر سوار تین نامعلوم افراد نے اٹلی سے تعلق رکھنے والے 50 سالہ امدادی کارکن تاویلا سیزیر کو ڈھاکہ کی ایک سڑک پر گولی مارکر ہلاک کر دیا جب وہ وہاں جوگنگ کر رہا تھا۔حملے کے فوری بعد اطالوی شہری کوعلاج کے لئے ایک قریبی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹرز نے اسے مردہ قرار دے دیا۔دریں اثناء عینی شاہدین نے بتایا کہ انہوں نے تین مرتبہ گولی چلنے کی آواز سنی اور حملہ آوروں کو فرار ہو تے دیکھا۔ ذرائع کے مطابق اگر یہ کارروائی واقعی داعش کی ہے تو یہ اس تنظیم کی بنگلہ دیش میں پہلی بڑی اور واضح کارروائی ہو گی۔

وزیراعظم محمد نواز شریف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 70 ویں سیشن کے موقع پر عالمی رہنماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ اکٹھے ہوں گے

پاکستان قازقستان کی سلامتی کونسل میں غیر مستقل نشست حاصل کرنے کی حمایت کرے گا، وزیر اعوزیراعظم محمد نواز شریف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 70 ویں سیشن کے موقع پر عالمی رہنماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ اکٹھے ہوں گےظم نواز شریف

وزیراعظم محمد نواز شریف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 70 ویں سیشن کے موقع پر عالمی رہنماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ اکٹھے ہوں گے، اجلاس میں عالمی امور کا جامع جائزہ لیا جائے گا اور ترقی کے مستقبل کا لائحہ عمل تیار کیا جائے گا، وزیراعظم 30 ستمبر کو جنرل اسمبلی سے خطاب کریں گے
اقوام متحدہ ۔ 28 ستمبر (اے پی پی) وزیراعظم محمد نوازشریف اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے 70 ویں سیشن کے موقع پر اقوام متحدہ کے ہیڈ کوارٹرز میں عالمی رہنماؤں اور پالیسی سازوں کے ساتھ اکٹھے ہونگے۔ اجلاس میں عالمی امور کا جامع جائزہ لیا جائے گا اور ترقی کے مستقبل کا لائحہ عمل تیار کیا جائے گا۔ وزیراعظم جو عالمی ادارہ میں پاکستانی وفد کی قیادت کر رہے ہیں، 30 ستمبر کو جنرل اسمبلی سے خطاب کرینگے اور پاکستانی خارجہ پالیسی اور اہم علاقائی اور عالمی ایشوز پر پاکستان کے موقف اور ترجیحات سے متعلق اپنے وژن سے آگاہ کرینگے۔ سیشن سے امریکی صدر بارک اوباما ، روسی صدر ولادی میر پیوٹن، چینی صدر شی جن پنگ، ایرانی صدر حسن روحانی اور فر انس کے صدر فرانکوس ہولانڈی سمیت 150 سے زائد عالمی رہنما خطاب کر رہے ہیں۔ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اہم اجلاس کے موقع پر زبردست سیکورٹی انتظامات کئے گئے ہیں۔ اقوام متحدہ میں پاکستان کی سفیر ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے جنرل اسمبلی کے 70 ویں سیشن کو تاریخی قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس اجلاس کے دوران موسمیاتی تبدیلی، صنفی مساوات، جنوب جنوب تعاون، عالمی ترقیاتی اہداف اور اقوام متحدہ کے امن برقرار رکھنے کی کوششوں جیسے ایشوز پر اظہار خیال کیا جائے گا۔ وزیراعظم نوازشریف نے پہلے ہی جنوب جنوب تعاون، صنفی مساوات اور خواتین کو بااختیار بنانے سے متعلق عالمی رہنماؤں کے اجلاس سے خطاب کیا ہے۔ انہوں نے 2015ء کے بعد کے ترقیاتی ایجنڈا کی منظوری سے متعلق بھی اقوام متحدہ کے سربراہ اجلاس سے خطاب کیا۔ وزیراعظم نوازشریف امریکی صدر باراک اوباما کے ہمراہ اقوام متحدہ کے امن برقرار رکھنے کے اقدامات سے متعلق ایک اور سربراہ اجلاس کی شریک صدارت بھی کرینگے۔

نوبل امن انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی کا اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی ہال میں خطاب

نوبل امن انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی کا اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی ہال میں خطاب

نوبل امن انعام یافتہ ملالہ یوسفزئی کا اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی ہال میں خطاب
اقوام متحدہ۔26 ستمبر (اے پی پی) تعلیم کیلئے کام کرنے والی پاکستانی طالبہ ملالہ یوسفزئی نے عالمی رہنماؤں پر زور دیا ہے کہ وہ ہر بچے کو تحفظ، آزادانہ اور معیاری پرائمری و ثانوی تعلیم کا حق دینے کا عہد کریں۔ جمعہ کو اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی ہال کے سب سے بڑے پلیٹ فارم سے سینکڑوں سربراہان ممالک و حکومت اور سینئر سرکاری حکام سے خطاب کرتے ہوئے ملالہ یوسف زئی ، جسے تعلیم کے فروغ کیلئے کام کرنے پر 2012ء میں طالبان نے گولی مار کر زخمی کردیا تھا، نے کہا کہ یہاں بیٹھے عالمی رہنما توجہ دیں کہ کیونکہ نئی نسل اپنی آواز بلند کر رہی ہے۔

انہوں نے کہاکہ آج ہم 193 نوجوان ، کروڑوں نوجوانوں کی نمائندگی کر رہے ہیں۔ ہم میں سے ہر نوجوان کی مقامی لالٹین ہمارے مستقبل کی امیدوں کی کرنیں ہیں کیونکہ آپ نے عالمی اہداف کو پورا کرنے کے عزم کر رکھا ہے جبکہ ہر نوجوان نے بلیو لائٹ اٹھا رکھی تھی۔ جنرل اسمبلی کے ہال میں نوبل انعام یافتہ نوجوان رہنما کے خطاب سے کچھ دیر بعد جنرل اسمبلی نے 2030ء کیلئے پائیدار ترقی کا ایجنڈا اختیار کیا جس کا حصہ 17 عالمی اہداف بنانے کیلئے ہیں جس کا مقصد تاریخی ہزاریہ ترقیاتی اہداف کے مشن کو جاری رکھنا ہے جو سمتبر2000ء میں 15سال کیلئے غربت کے خاتمہ کے مقاصد کے ساتھ شروع کیا گیا تھا۔ ملالہ نے کہا کہ مجھے امید ہے کہ اقوام متحدہ میں جمع ہم سب لوگ تعلیم اور امن کے اہداف کے حصول کیلئے متحد ہیں اور جس کے ذریعے ہم نہ صرف دنیا کو بہتر جگہ بنائیں گے بلکہ بہترین مسکن بنائیں گے۔ ملالہ نے زور دے کر کہا کہ تعلیم ایک امید ہے، تعلیم ہی امن ہے۔ بعدازاں انہوں نے ایک پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کیا اور صحافیوں کے سوالوں کے جواب بھی دیئے۔ پاکستان واپسی سے متعلق ایک سوال کے جواب میں ملالہ یوسف زئی نے کہا کہ ان کی خواہش ہے کہ وہ وطن واپس جائیں بالخصوص خوبصورت وادی سوات میں جہاں وہ پیدا ہوئیں اور پرورش پائی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ پاکستان جاکر تعلیم کے فروغ کیلئے کا کرنا چاہتی ہیں تاکہ ملک کی ترقی میں کردار ادا کرسکیں۔ انہوں نے فلسطینی بچوں سے ہمدردی کا اظہار کیا جو اشرائیلی قبضہ اور اسرائیل فلسطین لڑائی کی وجہ سے متاثر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انہوں نے انعام کے طور پر حاصل ہونے والی اپنی پوری رقم غزہ میں جنگ سے تباہ حال سکول کی تعمیر کیلئے عطیہ کردی ہے اور فلسطینی بچوں کی مدد جاری رکھنے کے عزم کا اظہار کیا۔ پاکستانی صحافیوں کیلئے پریس بریفنگ میں اقوام متحدہ میں پاکستان کی سفیر ڈاکٹر ملیحہ لودھی نے کہاکہ انہیں ملالہ یوسف زئی پر فخر ہے کیونکہ وہ دنیا کے نوجوانوں بالخصوص پاکستانی نوجوانوں کی رہنما بن کر ابھری ہیں۔

ماسکو رواں سال 9دسمبر کو اسلامی مالیات سے متعلق بین الاقوامی فور م کی میزبانی کر یگا

ماسکو رواں سال 9دسمبر کو اسلامی مالیات سے متعلق بین الاقوامی فور م کی میزبانی کر یگا

ماسکو رواں سال 9دسمبر کو اسلامی مالیات سے متعلق بین الاقوامی فور م کی میزبانی کر یگا
ماسکو،روس (ڈی این ڈی): اسلامی مالیات سے متعلق بین الاقوامی فور م کا انعقاد رواں سال9 دسمبرکو روس کے دارالحکومت ماسکو میں ہو گا جس میں اسلامی فنانس اور کیپیٹل مارکیٹ کے بنیادی رویے طے کئے جائیں گے۔
ذرائع ابلاغ کے مطابق ماسکو میں اسلامی فنانس انڈسٹری کے فورم کا انعقاد روس میں ہنر مند اسلامی کاروبار اور مالیات کے مرکز اسلامک بزنس اینڈ فنانس ڈویلپمنٹ فنڈ، بڑی بین الاقوامی تنظیموں کے اشتراک سے کر رہے ہیں۔
اس فورم کا انعقاد ہر سال دنیا کے 22 ملکوں میں سے کسی ایک میں ہو تا ہے اور رواں سال یہ ماسکو میں ہو گا۔ یہ روس اور سابق سوویت یونین کی ریاستوں میں اپنی نوعیت کی پہلی سرگرمی ہوگی ۔
ماسکو فورم میں اسلامی مالیات کرنے والے بڑے بڑے بینکوں ، کلیدی اسلامی ملکوں کی آزاد فاونڈیشنوں، فنانس ریگولیٹنگ، کنسلٹنٹ، آڈیٹراور قانونی کمپنیوں کے نمائندے اور اسی طرح روس اور سابق سوویت ریاستوں کے ماہرین شرکت کریں گے۔

پاکستان میں افغان آج عید الضحیٰ منا رہے ہیں

پاکستان میں افغان مہاجرین آج عید الضحیٰ منا رہے ہیں

پاکستان میں افغان مہاجرین آج عید الضحیٰ منا رہے ہیں
پشاور (ڈی این ڈی): صوبہ خیبر پختونوا کے دارالحکومت پشاور سمیت باقی اضلاع اور وفاق کے زیر انتظام قبائلی علاقوں میں مقیم افغان مہاجرین آج بروزجمعرات کو عید الضحیٰ منا رہے ہیں اور سنت ابراہیمی کی یادتازہ کرتے ہوئے جانوروں کی قربانی بھی کررہے ہیں۔
افغانستان میں رویت ہلال کمیٹی نہ ہونے کے باعث حکومت کی طرف سے حسب روایات سرکاری طورپر چاند کی رویت سعودی عرب کے ساتھ مقرر کی گئی ہے جس کے مطابق پاکستان میں مقیم افغان مہاجرین بھی سعودی عرب کے ساتھ عیدین اور رمضان المبار ک ادا کرتے ہیں ، لہذاپشاور سمیت خیبر پختونخوا اور قبائلی علاقوں میں رہائش پذیر لاکھوں افغان مہاجرین آج عید الضحیٰ منا رہے ہیں اور ساتھ قربانی بھی کررہے ہیں۔

داعش: 2400 روسی بتنظیم میں شامل

داعش عراق کے 40فیصد اور شام کے 50حصے پر قابض، وسطی ایشیا ء اور دیگر ممالک کے شہریوں کے علاوہ 2400روسی بھی تنظیم میں شامل

داعش عراق کے 40فیصد اور شام کے 50حصے پر قابض، وسطی ایشیا ء اور دیگر ممالک کے شہریوں کے علاوہ 2400روسی بھی تنظیم میں شامل
تاشقند، ازبکستان(ڈی این ڈی): عسکریت پسند تنظیم داعش کے قبضے میں عراق کی 40فیصد اور شام کی 50فیصد زمین آچکی ہے جبکہ اس کے جنگجوؤں میں وسطی ایشیا ئی ممالک سے3000 اور روس سے2400 افراد کے علاوہ فرانس، برطانیہ، جرمنی، امریکہ، سعودی عرب کے شہری بھی شامل ہیں۔
ڈسپیچ نیوز ڈیسک (ڈی این ڈی) نیوز ایجنسی کے مطابق یہ بات وفاقی سلامتی سروس کے ڈپٹی ڈائریکٹر (ایس سی او ) سمرنو نے تاشقند میں ہو نے والے شنگھائی تعاون تنظیم(ایس سی او) کے علاقائی انسداد دہشت گردی کے اجلاس میں بتائی۔
سمر نو ن کا کہنا تھاکہ ان کے تخمینوں کے مطابق، روس کے تقریبا 2400 شہریوں نے پہلے ہی اس دہشت گرد تنظیم کی سرگرمیوں میں حصہ لیا اور یہ بہت بڑی تعداد ہے۔
کرغستان کی وزارت داخلہ کے سربراہ ولادیمیرنے کہاکہ ایس سی او کے رکن ممالک سمیت مختلف ممالک کے شہریوں کی اسلامی ریاست میں بھرتی ایک خطرہ ہے اور سب سے زیادہ خطرناک بات ہے وہ جنگ کے تربیت حا صل کرنے کے بعد وطن واپس آرہے ہیں اور اس کام کے لیے وہ ان کے علاقے بھی استعمال کریں گے۔ ر وس کے تقریبا2500 شہری اور دیگر سابق سوویت ممالک کے7000 شہری شام میں سرگرم داعش کی صفوں میں شامل ہیں۔
اس بارے میں روس کے سماجی ایوان کی کمیٹی برائے عوامی سفارت کاری کی سربراہ یلینا سوتورمینا نے بتایا کہ ان کے مطابق بھرتی کرنے والے روس کے دور درازگاؤ ں پر خاص توجہ دیتے ہیں جہاں نوجوانوں کے لیے زندگی میں اپنا مقام ڈھونڈنا مشکل ہوتا ہے ۔واضح رہے کہ داعش کو روس میں کالعدم قرار دیا گیا ہے ۔
سی آئی اے کا اندازہ ہے کہ داعش کے جنگجوؤں کی کل تعداد30,000کے قریب ہے جبکہ عراقی حکام دو لاکھ کی بات کر رہے ہیں۔ داعش کی صفوں میں فرانس، برطانیہ، جرمنی، امریکہ، سعودی عرب کے شہری شامل ہیں اوراندازوں کے مطابق داعش کے کنٹرول میں عراق کی40 فی صد اور شام کی 50 فی صد سرزمین آچکی ہے۔

بڈھ بیر ائیر بیس حملہ آوروں نے ملحقہ علاقے سے لاجسٹک سپورٹ حاصل کی ، ذرائع

بڈھ بیر ائیر بیس حملہ آوروں نے ملحقہ علاقے سے لاجسٹک سپورٹ حاصل کی ، ذرائع
بڈھ بیر ائیر بیس حملہ آوروں نے ملحقہ علاقے سے لاجسٹک سپورٹ حاصل کی ، ذرائع

بڈھ بیر ائیر بیس حملہ آوروں نے ملحقہ علاقے سے لاجسٹک سپورٹ حاصل کی ، ذرائع
اسلام آباد (ڈی این ڈی): پاکستان ائیر فورس (پی اے ایف) کے پشاور کے علاقے بڈھ بیر میں قائم بیس کیمپ پر حملے میں ہلاک ہونے والے 13 دہشتگردوں نے ایک ملحقہ علاقے میں کہیں سے سوزوکی پک اب اور ہتھیار حاصل کئے تھے۔
ڈسپیچ نیوز ڈیسک (ڈی این ڈی) نیوز ایجنسی کے مطابق ذرائع نے بتایا ہے کہ ابتدائی تفتیش سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ پاک فضائیہ کے کیمپ پرحملہ بہت پیچیدہ تھا، پک اپ نے کو ئی بھی سیکورٹی چیک پوسٹ پار نہیں کیا تھی۔
دوسری جانب وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے میڈیا میں بڈھ بیر ایئر بیس حملے میں ہلاک ہونے والے دہشت گردوں کی شناخت پر جھونجھلاہٹ کا اظہار کیا ہے اور میڈیا کو دہشت گردوں کی شناخت کے بارے معلومات فراہم کرنے کے خلاف تحقیقات کا حکم دیا ہے۔
وزیر داخلہ کا خیال ہے کہ انٹیلی جنس ادارے دہشت گردوں کے حلیوں، سہولت کاروں اور دہشت گردوں کے حامیوں کی شناخت کے بارے میں معلومات اکھٹے کر ر ہے ہیں اور ہلاک دہشت گردوں کی شناخت ہے کو میڈیا کے ذریعے سامنے لانا ملک کے حق میں نہیں ہے۔
یاد رہے کہ گزشتہ جمعہ کے روز بڈھ بیر میں قائم پاک فضائیہ کے بیس کیمپ پر جن دہشت گردوں نے حملہ کیا اور بعدازاں وہ سب مارے گئے تھے ان میں سے پانچ کی شناخت کر لی گئی ہے۔ حملہ آوروں میں سے تین کا تعلق خیبر ایجنسی سے جبکہ دو کا تعلق سوات سے تھا۔
جمعہ کی صبح بڈھ بیر میں پاکستان ایئر فورس کے بیس کیمپ میں دہشتگردوں کے حملے کے نتیجے میں پاکستان آرمی کے کیپٹن اسفند یار بخاری اورپی اے ایف کے تین تکنیکی ماہرین اور 20دوسرے اہلکاروں سمیت 29افراد شہید اور 20سے زائد زخمی ہو گئے تھے، جبکہ سیکورٹی فورسز کی جوابی کاروائی میں تمام 13دہشت گرد مارے گئے تھے۔
بعدازاں فوج کے شعبہ تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل عاصم سلیم باجوہ نے پشاور میں میڈیا کو بتایا تھا کہ حملے کی منصوبہ بندی افغانستان میں کی گئی تھی اور دہشت گرد بھی وہیں سے آئے تھے۔ حملے کے وقت دہشت گردوں کو افغانستان سے ہی کنٹرول کیا جا رہا تھااور حملہ طالبان کے گروپ نے ہی کیا تھا۔

بڈھ بیر ائیر بیس حملہ آوروں نے ملحقہ علاقے سے لاجسٹک سپورٹ حاصل کی ، ذرائع abcd abcde iB

abc

روس رواں سال کے آخر میں چین کو اناج کی فراہمی شروع کردے گا

روس رواں سال کے آخر میں چین کو اناج کی فراہمی شروع کردے گا

روس رواں سال کے آخر میں چین کو اناج کی فراہمی شروع کردے گا
ماسکو،روس(ڈی این ڈی): روس اس سال کے آخرمیں چین کو اناج کی فراہمی شروع کردے گا جبکہ بیجنگ نے ماسکو سے مختلف زرعی اشیاء خریدنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے جس کی بنیادی وجہ روس کی قومی کرنسی روبل کی قیمت میں کمی آنا ہے جس سے برآمدات پر مثبت اثر پڑ رہا ہے ۔
یہ بات روس کے شعبہ زراعت سے متعلق وفاقی نگران ادارے کے نائب سربراہ الیکسے الیکسیئینکو نے بتائی۔
الیکسے الیکسیئینکو نے مزید بتایا کہ پاکستان، ایران اور عرب ممالک کے ساتھ روسی اناج کی فراہمی بارے مذاکرات ہو رہے ہیں اور روس ان ممالک میں اپنے وفود بھیجنے کے لیے تیار ہے تاکہ تفصیلی بات چیت کی جا سکے۔
واضح رہے کہ روس کا منصوبہ ہے کہ آئندہ دس سالوں میں اناج کی سالانہ پیداوار بڑھا کر12 کروڑ ٹن کی جائے۔اس بارے میں وزیر زراعت الیکساندر تکاچوو نے اعلان کیاتھاکہ وہ اناج کا ایک حصہ مویشی بانی کی صنعت میں اور دوسرا حصہ ملک کے اندر خوراک کی صنعت میں استعمال کئے جانے کا منصوبہ رکھتے ہیں جبکہ اناج کا تیسرا حصہ برآمد کیا جائے گا۔
وزیر زراعت کا مزید کہنا تھا کہ آئندہ پانچ دس سالوں میں روس زرعی اشیاء کے حوالے سے95 فیصد خودکفیل بن جائے گا۔ یہ بھی یاد رہے کہ ایران کو روس سے اناج کی فراہمی شروع ہو گئی ہے ا ور اس سال جون میں ایک لاکھ ٹن اناج ایران بھیجا جا چکا ہے ۔